Oops! It appears that you have disabled your Javascript. In order for you to see this page as it is meant to appear, we ask that you please re-enable your Javascript!

سکردو آنے والوں کے نام اہم پیغام

وادی سکردو پاکستان کے شمال جانب واقع ہے۔ہر سال لاکھوں سیاح سکردو کا رخ کرتے ہیں اور اس اسکے مداح ہو جاتے ہے۔سکردو روالپنڈی سے 640 کیلو میٹر پر واقع ہے۔
مانسرہ ناران کاغان اور بابوسر ٹاپ سے ہوتے ہوئے آپ چلاس اتر جاتے ہے۔
چلاس سے جگلوٹ تقریبا تین گھنٹے کا سفر ہے۔
جگلوٹ سے آپکے پاس سکردو میں داخل ہونے کے دو روٹ ہے۔
ایک روندو کچورا سے ہوتے ہوئے آپ سکردو میں داخل ہو سکتے ہیں نوٹ : اس روڈ پر ابھی میٹلیں کا کام ہو رہا ہے اور یہ روڈ سالہا سال مسافروں کے لئے اوپن ہوتا ہے اس روڈ سے جگلوٹ سے سکردو کا فاصلہ 138 کیلو میٹر ہے یعنی 138 کیلو میٹر سڑک پر ہو رہا ہے۔
عام طور پر اس روڈ پر جگلوٹ سے سکردو کا سفر 6 گھنٹوں میں طے ہوا کرتا تھا ۔
لیکن آج کل 7 یا 8 گھنٹے میں آپ طے کر سکتے ہے۔
معزز سیاح آپ لوگوں سے گزارش ہے کہ آپ جگلوٹ سکردو روڈ پر شام 5 بجے سفر کریں
اس وقت کام بند ہوچکا ہو گا اور آپ بغیر رکاوٹ کے سکردو پہنچ جائینگے۔
یا پھر آپ جمعے والے دن سفر کریں اس دن کام نہیں ہوتا ۔
زیادہ تر لوگ جو یہ صبح سفر کرتے ہیں اور بلاگ میں انتظار کرنا پڑتا ہے۔کیونکہ بلاسٹنک ہوتی ہے اور ٹریفک رکوائی جاتی ہے۔پھر سیاحوں کو کافی وقت انتظار کرنا پڑھتا ہے۔
اسلئے آپ ٹائمنگ کا انتخاب صحیح کرینگے تو آپ 7 یا 8 گھنٹے میں سکردو پہنچ جائینگے۔
دوسرا روٹ جگلوٹ سے وادی استور اور دیوسائی سے ہوتے ہوئے سکردو میں داخل ہو سکتے ہے،یہ روڈ صرف یکم جون سے آکتوبر کے آواخر تک اوپن ہوتا ہے۔ یہاں شیوسر لیک سے 9 کیلو میٹر پیچھے تک سڑک پکی ہے ۔
شیوسر لیک سے دیوسائی ٹاپ تک 3 گھنٹے کا سفر ہے جہاں ہر طرف لہلہاتی پھول اور یخ کرسٹل واٹر کی نہریں آپکی سواگت کرتی ہے۔اور روڈ بلکل پلین ہے کرولا کار ،ہایس بائکرز ہمیشہ اس روٹ کا انتخاب کرتے ہیں اور ٹاپ سے سکردو تقریبا ڈیڑھ گھنٹے کا سفر ہے۔

Tags: , , , ,